Home / پاکستان / سوئی ناردرن گیس کی بڑی کامیابی! یو ایف جی میں 1.60 فیصد کمی، 755 ملین روپے کی بچت کر کے مثال قائم کر دی

سوئی ناردرن گیس کی بڑی کامیابی! یو ایف جی میں 1.60 فیصد کمی، 755 ملین روپے کی بچت کر کے مثال قائم کر دی

Sharing is caring!

لاہور( مانیٹرنگ ڈیسک) سوئی ناردرن گیس کو یو ایف جی شرح اور والمیٹرک (مقداری) نقصانات میں کمی کے حوالے سے بڑی کامیابی حاصل ہوئی ہے۔تفصیلات کے مطابق سوئی ناردرن گیس نے ای سی سی کے منظور کردہ یو ایف جی میں کمی کے تین سالہ پروگرام کے مالی سال 2020/21 کی پہلی سہ ماہی کے نتائج جاری کردیے ہیں۔

نتائج کے مطابق سوئی ناردرن گیس کو یو ایف جی اور والمیٹرک نقصان میں کمی کے لیے بالترتیب 1.25 فیصد اور 1،425 ایم ایم سی ایف کے اہداف دیے گیے تھے تاہم کمپنی زبردست کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے یو ایف جی میں 1.60 فیصد جبکہ والمیٹرک نقصان میں 1،567 ایم ایم سی ایف کمی لانے میں کامیاب رہی۔سوئی نادرن گیس کے ترجمان کے مطابق اس کامیابی کے نتیجے میں کمپنی کو 755 ملین روپے کی بچت ہوئی ہے. یہاں یہ واضح کیا جانا ضروری ہے کہ سوئی ناردرن گیس نے گیس چوری پر قابو پانے، گیس لیکیجز کی درستگی اور میژرمنٹ کو درست کرنے کے لیے خصوصی کاوشیں شروع کررکھی ہیں. اس کے علاوہ سوئی ناردرن گیس کی جانب سے زائد یو ایف جی شرح کے حامل علاقوں میں نقصانات پر قابو پانے کی لیے بھی خصوصی کوششیں کی گئیں۔

یہ علاقے ماضی میں کمپنی کے لیے مشکلات کا باعث بنے رہے اور کمپنی کے مجموعی والمیٹرک نقصان کا 33 فیصد حصہ انہی علاقوں کے باعث ہوتا تھا. سوئی نادرن گیس کی اہم کامیابیوں کی تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے ادارے کے ترجمان کا کہنا تھا کہ زائد یو ایف جی شرح کے حامل علاقوں میں اوسط ماہانہ گیس خسارے میں 40 فیصد کمی واقع ہوئی ہے اور یوں خسارہ 1،413 ایم ایم سی ایف سے کم ہوکر 856 ایم ایم سی ایف رہ گیا ہے۔ان علاقوں میں کمپنی نے 1،008 غیر قانونی کنکشنز منقطع کیے. اس کے علاوہ گیس چوروں کے خلاف 104 ایف آئی اے درج کروائی گئیں. سوئی نادرن گیس نے نگرانی کے نظام کو بھی بہتر بنایا ہے جس کے بعد صارفین کی مختلف کیٹگریز میں گیس چوری کے 14،488 واقعات کا پتہ لگایا گیا جس کے نتیجے میں 404 ایم ایم سی ایف یا 472 ملین روپے کے مساوی گیس کی بکنگ کی گئی۔

سوئی نادرن گیس نے جدید ٹیکنالوجی سے استفادہ کرتے ہوئے لیزر لیک ڈٹیکٹرز کی مدد سے 7،889 زیرزمین لیکیجز کا پتہ لگاکر درستگی کی گئی . اس کے علاوہ سطح زمین پر 236،808 لیکجز کا بھی سراغ لگانے کے بعد انہیں درست کیا گیا. ادارے کی جانب سے سالانہ اہداف کے حصول کے لیے پلان کو بھی حتمی شکل دے دی گئی ہے. اس پلان میں شامل اہم منصوبوں میں تمام صنعتی صارفین کی اسکاڈا سسٹم کے ذریعے مکمل کوریج، غیر مجاز رسائی روکنے کے لیے مشتبہ اور بڑے صنعتی صارفین پر 200 سائبر لاکز کی تنصیب، لاہور اور پشاور جیسے زیادہ لیکیجز والے ریجنز میں زیرزمین لیکیجز کا سراغ لگانے کے لیے سروے شامل ہیں۔کمپنی نے جنوری 2021ء کے اختتام تک ان اہداف کو حاصل کرنے کا منصوبہ تیار کیا ہے. اس کے علاوہ سوئی ناردرن گیس مشتبہ صارفین کی خصوصی مانیٹرنگ کے لیے چھاپے بھی مارے گی. ریگولیٹنگ اسٹیشن کی سطح پر نقصانات کی مائیکرو مانیٹرنگ، ڈسٹری بیوشن نیٹ ورک کی ڈیجیٹائزیشن اور بڑے شہروں میں پریشر کو بہتر بنانے کے لیے ڈسٹری بیوشن نیٹ ورک کی سیگمنٹیشن بھی منصوبے کا حصہ ہے۔

About admin

Check Also

Top 25+ Creative Bamboo Fence Ideas

The fence of the house in addition to functioning as a protector of the house …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *